مقبوضہ کشمیر میں نوجوانوں کو انسانی ڈھال بنانے کا واقعہ، پلواما میں 3 نوجوان شہید

0
1075
Indian police chase Kashmiri protesters during a strike called by separatist groups against the recent killings in south Kashmir which they say were carried out by Indian security forces, in Srinagar September 21, 2013. REUTERS/Danish Ismail (INDIAN-ADMINISTERED KASHMIR - Tags: CIVIL UNREST)

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں نے ضلع پلواما میں 3 نوجوان کشمیریوں کو شہید کردیا۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق تازہ واقعے میں ضلع پلواما کے علاقے ترال سیکٹر میں بھارتی فوج کی جانب سے سرچ آپریشن کے دوران فائرنگ کے نتیجے میں تینوں نوجوان شہید ہوئے۔

ضلع پلواما میں مذکورہ نوجوانوں کی ہلاکت سے قبل بھارتی فوج پر حملہ کیا گیا تھا جس میں ایک افسر اور ایک اہلکار زخمی ہوگئے تھے۔

نوجوانوں کی شہادت کے بعد ضلع بھر میں احتجاجی مظاہرے کیے گئے،اس دوران بھارتی پولیس کی جانب سے مظاہرین پر تشدد کیا گیا جس کے باعث کئی افراد زخمی ہوئے۔

گزشتہ روز ضلع کلگام میں نوجوان اعجاز احمد کی شہادت کے بعد منگل کو ضلع بھر میں شٹر ڈائون ہڑتال کی گئی۔ ہڑتال کے نتیجے میں ضلع کے تجارتی مراکز، دکانیں بند رہیں جبکہ سڑکوں پر ٹریفک بھی معطل رہا۔

بھارتی فورسز کی جانب سے کشمیری نوجوانوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کا ایک اور واقعہ سامنے آیا ہے۔

بھارتی فوجیوں نے پمپور کے گائوں سمبورا میں مظاہرین کے پتھراؤ سے بچنے کے لیے 4 کشمیری نوجوانوں کو اپنی گاڑیوں کے سامنے بٹھالیا۔

سوشل میڈیا پروائرل ہونے والی ایک نئی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بھارتی فوج نے مظاہرین کے ممکنہ ردعمل سے بچنے کے لیے نوجوان کشمیریوں کو اپنی گاڑیوں کے آگے باندھ رکھا ہے۔

خیال رہے کہ 1989 سے متعدد مسلح گروپ بھارتی فوج اور ہمالیہ کے علاقوں میں تعینات پولیس سے لڑتے آئے ہیں اور وہ پاکستان سے انضمام یا کشمیر کی آزادی چاہتے ہیں۔

اس لڑائی کے دوران اب تک ہزاروں لوگ مارے جاچکے ہیں، جس میں زیادہ تر عام شہری ہیں۔

کشمیر میں جاری اس تشدد میں گزشتہ دہائی میں تیزی سے کمی آئی تھی لیکن گزشتہ سال بھارتی فوج کے عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن آل آؤٹ کے نتیجے میں 350 اموات ہوئیں اور وادی میں جاری کشیدگی میں مزید اضافہ ہوگیا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here